کالم

عقل کے اندھے

جسمانی معزوری کے شکار افراد دنیا بھر میں توجہ اور ہمدردی کے مستحق ہو تے ہیں
ان کو معزوری کا احساس نہ ۔۔۔ ان کی عزت نفس مجروح نہ ہو ۔۔۔۔ یہی احساس پروان چڑھانے کیلئے تو ان کو خصوصی افراد کہا جاتا ہے ۔۔۔ اور سال میں ایک دن ان کیلئے مختص کیا گیا ہے ۔
ان معزوروں میں سب سے زیادہ اہمیت کے حامل بینائی سے محروم افراد ہیں ۔۔۔۔
اسی لئے ان کے ہاتھ میں سفید چھڑی تھمائی گئی ہے تاکہ ان کا احترام ہو سکے ۔۔۔ ان کا ہاتھ تھام لیا جائے ۔۔۔۔۔ ان کو سڑک پار کروادی جائے ۔۔۔
پوری دنیا جس د ن  ان معذوروں  مجبوروں سے اظہار یکجہتی کا دن  منا رہی تھی ان میں  اپنی محبتیں اور چاہتیں بانٹ رہی تھی تو وہیں پاکستان کے شہر لاہور میں ایوان وزیر اعلیٰ کے سامنے اپنے حق کیلئے آواز اٹھانے والے   نابیناؤں کو پو لیس دھکے دے رہی تھی ۔۔۔ان کو دھتکارا گیا اورتشدد کا نشانہ بنایا گیا ۔۔۔
یہ سب کیا تھا ۔۔۔۔؟
یعنی ایک طرف آنکھ کے اندھے  اور دوسری جانب عقل کے اندھے تھے ۔۔۔۔۔۔
ان عقل کے اندھوں نے پو ری دنیا میں پاکستان کو شرمندہ کر دیا ۔۔۔ہمارا چہرہ مسخ کر دیا ۔۔
ضرورت  تو ان عقل کے انھوں کا ماتم کرنے کی ہے ۔۔۔۔
پو لیس کا یہ انداز ایک مائنڈ سیٹ ہے ۔۔۔کہ پو لیس اپنے حق میں آواز اٹھانے والوں سے کیسا سلوک کرتی ہے ۔۔۔۔
یعنی ثابت ہو گیا  کہ اصلاحات کا ڈھنڈورا پیٹنے کے باوجود پو لیس کا مائنڈ سیٹ تبدیل نہیں کیا جاسکا اور نہ ہی ان کی ٹریننگ میں کوئی جوہری تبدیلی واقع ہو ئی ہے ۔۔۔
یعنی ابھی تک ہماری پولیس کو یہ معلوم ہی نہیں  کن مظاہرین سے کس طرح کا برتاؤ کرنا ہے ۔۔۔ پو لیس ابھی تک  سب کو ایک  ہی طرح کے ڈنڈے سے ہانکنے کے فارمولے پر عمل پیرا ہے ۔۔
پو لیس کے اسی تربیتی نظام کے فقدان نے آج دنیا میں ہماری سبکی کی ہے ۔

About the author

ایڈمن

Add Comment

Click here to post a comment